رُوئے پُر نور ہے والضحیٰ آپؐ کا

رُوئے پُر نور ہے والضحیٰ آپؐ کا

نام ہے احمد مجتبیٰؐ آپؐ کا

 

عرشِ حق آپؐ کا مقتضا ، منتظر

راستہ سدرۃ المنتہیٰ آپؐ کا

 

آپؐ کے ہیں زمیں آسمان بحر و بر

یعنی سب کچھ ہے یا مصطفیٰؐ آپؐ کا

 

آپؐ کا دور ملتا ہمیں بھی اگر

دیکھتے حسنِ بدر اُلدجیٰ آپؐ کا

 

انبیاؐ تھے ستارے سبھی چھپ گئے

چاند نکلا ہے خیرالوریٰؐ آپؐ کا

 

علم کا شہر بس آپؐ کی ذات ہے

اور در ہے علیؓ المرتضیٰ آپؐ کا

 

ہم تو اشفاقؔ یہ جانتے ہیں فقط

مرتبہ ہے وریٰ الوریٰ آپؐ کا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

طبیعت فطرتاََ پائی سخن کے واسطے موزوں
ہے یہ میدانِ ثنا گر نہ پڑے منہ کے بل
کیفِ یادِ حبیب زیادہ ہے
(سلام) نورِ چشمِ آمنہ اے ماہِ طلعت السلام
پھر کے گلی گلی تباہ ٹھوکریں سب کی کھائے کیوں
اٹھا دو پردہ دکھا دو چہرہ کہ نورِ باری حجاب میں ہے
سخن کو رتبہ ملا ہے مری زباں کیلئے
سرِ میدانِ محشر جب مری فردِ عمل نکلی
راگ ہے ’’باگیشری‘‘ کا اور بیاں شانِ رسول
خواب میں کاش کبھی ایسی بھی ساعت پاؤں

اشتہارات