اردوئے معلیٰ

Search

ریاضِ نعت میں دل مدح خوان رحمت ہے

ہر ایک شعر گلِِ زعفرانِ رحمت ہے

 

زمیں پہ آپ کا در آسمانِ رحمت ہے

اور اس سے آگے تو بس لامکانِ رحمت ہے

 

ہمارا دین شجر ہے وہ جس کی شاخوں کا

ہر ایک گل ہی گلِ عاشقانِ رحمت ہے

 

سمندروں میں ہوا بھی ہے کشتیوں کی کنیز

کہ ان کے ساتھ ترا بادبانِ رحمت ہے

 

سنور رہی ہے صباحت جو دستِ تیرگی پر

حنائے صبح نہیں یہ اذانِ رحمت ہے

 

قسم ہے اس کی حسیں رمزِ پیچ داری کی

وہ زلفِ تاب فگن ترجمانِ رحمت ہے

 

رکھا ہے ” رے”  کی رحیمی نے سر پہ ” میم” کا تاج

یہ میم حسنِ محبت ہے ، شانِ رحمت ہے

 

جو دانے دانے پہ جاری ہے تیرا وردِ درود

یہ اہتمام بھی اک کاروانِ رحمت ہے

 

غبارِ راہ پہ دل اس لئے بچھائے ہیں

حضور آپ کا ہر گام جانِ رحمت ہے

 

مدارِ قوت  حیدر ہے رمزِ عشق و وفا

جو ایک نانِ جویں ہے وہ نانِ رحمت ہے

 

حضور آپ کی ہستی ہے روشنی کا دیار

حضور آپ کا اسوہ جہانِ رحمت ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ