اردوئے معلیٰ

Search

 

زندگی اپنی کسی طور بناتی جاؤں

اپنے جزبات کو اشکوں میں بہاتی جاؤں

 

دل کھنچا جاتا ہے اب سوئے مدینہ میرا

اُن () کے انوار سے مانگ اپنی سجاتی جاؤں

 

میرے اللہ میری تقدیر میں ایسا لکھ دے

اپنی قسمت کو وہاں جا کے بناتی جاؤں

 

ہو مرے ہاتھ میں بس عشق نبی () کا جھنڈا

اپنے ہی ناز سرِ حشر اٹھاتی جاؤں

 

اب ہے گل بانو فقط ایک تمنا میری

اُن() کے اسویٰ پہ چلوں ، خود کو بناتی جاؤں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ