اردوئے معلیٰ

زندگی شاد کیا کرتی ہے

جب انہیں یاد کیا کرتی ہے

 

کیسے جگمگ مرے سارے درو بام

عیدِ میلاد کیا کرتی ہے

 

ان کے نعت کی سدا رحمتِ رب

آپ امداد کیا کرتی ہے

 

اپنے آباء کی طرح مدحِ نبی

میری اولاد کیا کرتی ہے

 

ہو جو ویران تو پھر خانہء دل

نعت آباد کیا کرتی ہے

 

یادِ سرکارِ دو عالم کی گرفت

غم سے آزاد کیا کرتی ہے

 

آپ کے حکم پہ فکرِ صائب

بے دھڑک صاد کیا کرتی ہے

 

آپ کا فقر و غنیٰ یہ دنیا

آج بھی یاد کیا کرتی ہے

 

ہر ڈگر عرشؔ اطاعت کے سوا

وقت برباد کیا کرتی ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات