اردوئے معلیٰ

Search

سارا عالم سجا آج کی رات ہے

نور جلوہ نما آج کی رات ہے

 

قدسیوں کی چلی آج بارات ہے

شاہ دولھا بنا آج کی رات ہے

 

نور سے نور کی یہ ملاقات ہے

کیسا رتبہ ملا آج کی رات ہے

 

سج گیا عرش اور ساعتیں رُک گئیں

معجزہ ہو گیا آج کی رات ہے

 

اپنی امت کی ہے فکر ہر دم مجھے

مصطفیٰ نے کہا آج کی رات ہے

 

چوم کر نعلِ شاہِ امم عرش بھی

ہو گیا خوش نما آج کی رات ہے

 

ان کے صدقے میں سب نعمتیں مل گئیں

بخت روشن ہوا آج کی رات ہے

 

رحمتوں کے جو بادل تھے چھائے ہوئے

کھل کے برسی گھٹا آج کی رات ہے

 

ناز تیری بھی قسمت چمک جائے گی

تونے کی جو ثنا آج کی رات ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ