سجی ہے رنگ رنگ کائناتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

سجی ہے رنگ رنگ کائناتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

حدودِ حمد سے ورا ہے ذاتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

 

ودود ہے، مجیب ہے، کریم ہے، حفیظ ہے

ولی کرم عطا غنا صفاتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

 

وہ خالق و وکیل ہے وہ مالک و جلیل ہے

بہ نطقِ مصطفیٰ ہیں محکماتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

 

وہ ابتدا کی ابتدا وہ انتہا کی انتہا

گماں سے بھی ورا ہیں معجزاتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

 

چرند اور پرند، جن و انس مہر و ماہ کے

زباں بیاں ہیں صرفِ حامداتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

 

تری ہے ذات مستقل تو واجب الوجود ہے

حیات ہی حیات ہے ثباتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

 

یہ منظرِ حزیں بفیضِ مصطفٰی و مجتبٰی

ہوا ہے سرنگوں بہ التفاتِ رَبِّيَ الْعَظِیْم

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ