اردو معلی copy
(ہمارا نصب العین ، ادب اثاثہ کا تحفظ)

سرد ہوائیں بول رہی ہیں، بالکل اُس کے لہجے میں

سرد ہوائیں بول رہی ہیں، بالکل اُس کے لہجے میں

میں بھی یاد کی چادر اوڑھے اُس کو سننے بیٹھا ہوں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

یہ پھول دیکھ رہے ہو یہ اس کا لہجہ تھا
دل لگی ترک محبت نہیں تقصیر معاف
‏یہ برف موسم جو شہرِ جاں میں کُچھ اور لمحے ٹھہر گیا تو،
گرم آنسو اور ٹھنڈی آہیں ، من میں کیا کیا موسم
محبت بانٹنا سیکھو محبت ہے عطا رب کی
ان کو معلوم کہاں رزق سخن کی وقعت
میں پورے شہر کی ہمدردیوں کا کیا کرتی
جسم سے روح کا جدا ہونا
ضبط میں جان جا نہیں سکتی
سکوت ِشام میں چیخیں سنائی دیتی ہیں