سرورِ قلب و جاں، اللہ ہی اللہ

سرورِ قلب و جاں، اللہ ہی اللہ

کہاں تُو، میں کہاں، اللہ ہی اللہ

 

نہاں یادِ خُدا ہے دِل میں میرے

عیاں وردِ زباں، اللہ ہی اللہ

 

طیور و جن و انسان و ملائک

سبھی رطبُ اللساں، اللہ ہی اللہ

 

تمامی اولیاء بھی، انبیاء بھی

کریں ہر دم بیاں، اللہ ہی اللہ

 

ہوئے تخلیق پل میں سارے عالم

صدائے کُن فکاں، اللہ ہی اللہ

 

وہی محبوبِؐ ربّ العالمیں ہیں

وہ رحمت کے جہاں، اللہ ہی اللہ

 

ظفرؔ! عُشاق کی جنت زمیں پر

نبیؐ کا آستاں، اللہ ہی اللہ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

ضیائے کون و مکاں لا الٰہ الا اللہ
دیار ہجر میں شمعیں جلا رہا ہے وہی
فلک میں حدّ ِ نظر لا اِلہ الہ اللہ
لحد چاہوں مدینے میں خدا، تیری عبادت میں
خدائے پاک ربُّ العالمیں ہے، خدا بندے کی شہ رگ سے قریں ہے
خطا کاروں کا تُو ستار بھی ہے
مجھے بحرِ غم سے اُچھال دے
صدائے کن فکاں پرتو خدا کا
خدا توفیق دے حمد و ثناء کی
تو خبیر ہے تو علیم ہے