اردوئے معلیٰ

Search

سرکارِ دو عالم سا دلاور نہ ملے گا

دنیا میں کوئی آپ کا ہمسر نہ ملے گا

 

با چشمِ عقیدت کرو روضے کی زیارت

اس جیسا کوئی آنکھ کو منظر نہ ملے گا

 

بھیجے ہیں خدا نے تو سوا لاکھ پیمبر

ان ساروں میں سرکار سا دلبر نہ ملے گا

 

ایمان کی کشتی ہو تو پتوار محبّت

ورنہ یہ شفاعت کا سمندر نہ ملے گا

 

آ دامنِ حاجت کو پسارے ہوئے طیبہ

اس در سا زمانے میں کوئی در نہ ملے گا

 

سرکار کی سیرت پہ عمل اصلِ محبت

اس راہ میں زاہدؔ کو کوئی شر نہ ملے گا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ