اردوئے معلیٰ

سفر ہے خواب کا اور باادب ہے

 

سفر ہے خواب کا اور باادب ہے

مقابل روضۂ شاہِ عرب ہے

 

ادا ہوگا نہیں توصیف کا حق

فقط کوشش ہے ، چاہت ہے ، طلب ہے

 

مرے لفظوں سے پھوٹی روشنی اور

یہ صفحوں پر اُجالا سا عجب ہے

 

میں کہتا ہوں نبی کی نعت دل سے

یہی دل کی طہارت کا سبب ہے

 

قوی امکان ہے بخشش کا اشعرؔ

درودِ پاک میرے وردِ لب ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ