اردوئے معلیٰ

Search

سلام اے ابنِ عبداللہ بن عبد المطلب تم پر

سلام اے نورِ چشمِ آمنہ رشکِ مہِ انور

 

سلام اے افتخارِ نوعِ انساں طاہر و اطہر

سلام اے مصطفیٰ صلِّ علیٰ اے سب کے پیغمبر

 

سلام اے مصدرِ نورِ ہدیٰ اے دین کے سرور

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اے گلشنِ ہستی میں جس کا ہر طرف شہرہ

سلام اے وادی ام القریٰ کے ناز پروردہ

 

سلام اے نازشِ ہجرت سلام اے رونقِ طیبہ

سلام اے مرجعِ عالم ہے جس کا اخضریں روضہ

 

سلام اے بارشِ انوارِ یزداں کا جو ہے محور

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اے وہ کہ جس سے رونقِ گلزارِ ہستی ہے

سلام اے وہ کہ جس سے مقتبس ہر اوج و پستی ہے

 

سلام اے وہ کہ جس پر ہر گھڑی رحمت برستی ہے

سلام اے وہ کہ جس سے نشّۂ وحدت پرستی ہے

 

سلام اے ساقیِ دوراں سلام اے ساقیِ کوثر

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اے وہ کہ ہے لاریب جس کا قلبِ نورانی

سلام اے وہ کہ جو ہے مہبطِ آیاتِ قرآنی

 

سلام اے وہ قیامت تک ہے باقی جس کی سلطانی

سلام اے وہ کہ پیدا ہی نہیں جس کا کوئی ثانی

 

سلام اے وہ جو مخلوقِ خدا میں سب سے ہے برتر

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اے وہ کہ جس سے سلسلہ رشد و ہدایت کا

سلام اے وہ رواں چشمہ ہے جس سے علم و حکمت کا

 

سلام اے وہ کیا سر جس نے اونچا آدمیت کا

سلام اے وہ کہ جس سے چاک ہے پردہ جہالت کا

 

سلام اے وہ کہ جس کے دم سے دارِ آخرت بہتر

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اس پر لباسِ فاخرہ سے جو گریزاں تھا

سلام اس پر لباسِ فقر پر اپنے جو فرحاں تھا

 

سلام اس پر جو از حد بے نیازِ ساز و ساماں تھا

سلام اس پر کہ جو لذت کشِ صہبائے عرفاں تھا

 

سلام اس پر کہ تھی نانِ جویں جس کی غذا اکثر

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اس پر کہ جس کو رتبۂ معراج ہے حاصل

سلام اس پر شریعت جس کی روشن دین ہے کامل

 

سلام اس پر کہ جو طوفاں زدوں کو راحتِ ساحل

سلام اس پر کہ جس سے لرزہ بر اندام ہے باطل

 

سلام اس پر کہ جو گم گشتگانِ راہ کو رہبر

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اس پر کہ جس کا جدِ امجد بانی زمزم

سلام اس پر کہ جس کا نور افشاں عرش پر پرچم

 

سلام اس پر کہ وابستہ ہے جس سے عظمتِ آدم

سلام اس پر سلام آتے ہیں جس کی ذات پر پیہم

 

سلام اے خیر کے داعی سلام اے ناہیِ منکر

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اے وہ بنے جس کا نہ ذکر افسانۂ ماضی

سلام اے وہ کہ ہے مشہورِ عالم جس کی فیاضی

 

سلام اے رحم پرور، عدل گستر، حاکم و قاضی

سلام اس پر کہ جس کے فیصلوں پر سب کے دل راضی

 

سلام اس پر جو بے حد مہرباں ہے اپنی امت پر

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

سلام اے صاحبِ اخلاقِ اعلیٰ صابر و شاکر

سلام اے وہ کہ پیغامِ خدا جس پر ہوا آخر

 

سلام اے وہ جو ہے محبوبِ ربِ حاضر و ناظر

سلام اس پر کہ جس کی محمدت سے ہے نظرؔ قاصر

 

سلام اس پر ہے جس کا مدح خواں خود خالقِ اکبر

سلام اے خاصۂ خاصانِ رب اے شافعِ محشر

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ