اردوئے معلیٰ

Search

سندھ کا باغِ جناں ہیں حضرتِ عبداللطیف

آفتابِ گل فشاں ہیں حضرتِ عبداللطیف

 

اہلِ دل کے واسطے اہل نظر کے واسطے

جلوہ گاہِ عارفاں ہیں حضرتِ عبداللطیف

 

کیوں نہ روشن ہو زمینِ سندھ تاروں کی طرح

اس زمیں کے آسماں ہیں حضرتِ عبداللطیف

 

ذرّہ ذرّہ بھٹ کا گویا ہے لطافت درکنار

لطف کے وہ رازداں ہیں حضرتِ عبداللطیف

 

اس زمیں یہ کیوں نہ اترائے اے محمد کی ثنا

اس کے پہلے نعت خواں ہیں حضرتِ عبداللطیف

 

کیا کہے وقتِ زیارت کوئی اپنے دل کی بات

بے زبانوں کی زباں ہیں حضرتِ عبداللطیف

 

آلِ اطہر کی مسلسل طاہریت سے صبیحؔ

مظہرِ قدوسیاں ہیں حضرتِ عبداللطیف

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ