اردوئے معلیٰ

Search

سوئی تیری گود میں زہرا کی آل اے کربلا

ہو گیا ہے تیری قسمت کا کمال اے کربلا

 

بس گئی خوشبو شہیدوں کے لہو کی خاک میں

کٹ گئے تجھ پر علی کے نو نہال اے کربلا

 

آتے ہیں کرنے زیارت تیری ارضِ پاک پر

لے کے سینوں میں سبھی حزن و ملال اے کر بلا

 

تیرا اک اک ذرہ ذرہ بے شبہ رشکِ قمر

کس قدر ہے تیری دھرتی بے مثال اے کربلا

 

کر گیا تجھ کو امرسجدہ علی کے لال کا

آ نہیں سکتا کبھی تجھ پر زوال اے کربلا

 

ناز کی حسرت ہے چُومے روضۂ شبیر کو

بھر لے آنکھوں میں ترا حُسن و جمال اے کربلا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ