اردوئے معلیٰ

سرورِ کونین، جانِ کائنات

سرورِ کونین، جانِ کائنات

اس طرف بھی اک نگاہِ التفات

 

نعت اصلِ شاعری، اصلِ حیات

نعت عرفانِ سخن، عرفانِ ذات

 

زینتِ شہرِ سخن، وہ ایک نام

وجہِ تخلیقِ جہاں، وہ ایک ذات

 

آپ کی آمد سے یہ روشن ہوا

سب اندھیرے تھے جہاں میں بے ثبات

 

سب ترقی یافتہ اقوام نے

آپ سے پایا ہے آئینِ حیات

 

ہم گنہگاروں پہ ہو چشمِ کرم

جگمگا اٹھے تری امت کی رات

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ