ای میل E-mail

آج جب بکس(Box) کھولا
تو کافی دنوں بعد
ای میل تھی اُس کی
میسج تھا یہ اُس کا
’’مجبور ہوں میں
مِری انگلیاں اب کبھی
کرسکیں گی نہ ٹائپ
ترا ایڈرِس(Adress)
مرتضیٰ ایٹ دا ریٹ
یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

خُدائے زمان و مکاں ! الاماں
تعارف
تنظیمِ گلستاں
گمشدہ
وہیں تو عشق رہتا ہے
ہوگی ہلال و بدر کی کیا چاندنی حسیں
تخلیق کا وجود جہاں تک نظر میں ہے
تمہار ے لئے ایک نظم
کس قدر مصروفیت ہے
ملالہ یُوسف زئی کے نام