شاہ بطحا مجھے نظر دے دیں

شاہ بطحا مجھے نظر دے دیں

میں ہوں انجان کچھ خبر دے دیں

کیا عجب یارِ غار کا صدقہ

وہ تجھے آگہی ظفرؔ دے دیں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

مرے اللہ مجھے حُسنِ نظر دے
وہ محبوبِ خدا و انس و جاں ہیں
’’ہے یہ اُمید رضاؔ کو تری رحمت سے شہا‘‘
’’تمہارے حکم کا باندھا ہوا سورج پھرے اُلٹا‘‘
’’ترا مرتبہ کیوں نہ اعلا ہو مولا‘‘
’’اخترِ خستہ طیبہ کو سب چلے تم بھی اب چلو‘‘
قرآن ہے کتاب، عمل اُسوۂ نبی
خُدا ارفع و اعلیٰ محترم ہے
یہی فرمانِ محبوبِ خداؐ ہے
یہ جُود و کرم آپؐ کا ہے، فیض و عطا ہے