اردو معلی copy
(ہمارا نصب العین ، ادب اثاثہ کا تحفظ)

شــیوہ عـــفو ہــو ، پیـــمانہ سالاری ہـــو

 

شــیوہ عـــفو ہــو ، پیـــمانہ سالاری ہـــو

پڑھ یہ سنت، کہ تری فکر میں بیداری ہـــو

 

خطبہ خیــر کو تفصیل سے، ترتیــل سے پڑھ

تاکہ وجــدان میں وجدان سی سرشاری ہـــو

 

لطــف تو تــب ہے کہ ہــر آن براہیمــی درود

آنکھ کی روح سے زمزم کی طرح جاری ہـــو

 

کون ہے میرے محــمد کے علاوہ جس کی

ذات بے مثــل ہو اور بات بھی معــیاری ہـــو

 

پیٹ پر باندھے وہ پتھــر سے کہاں عشق کرے

جــس کو دنیا کے وســائل کی طلب گاری ہـــو

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

میں نے اس قرینے سے نعتِ شہ رقم کی ہے
کون جانے کس بلندی پر مرے سرکار صلی اللہ علیہ وسلم ہیں
جھکا میں سجدے میں اپنا سر دیکھوں
ہے میرا سینہ، مرا مدینہ
سیر گلشن کون دیکھے دشتِ طیبہ چھوڑ کر
آپ کے دَر کی عجب توقیر ہے
نہیں کوئی، حبیبِ کبریاؐ سا
دِل میں آرام و سکوں، لُطف و قرار آپؐ سے ہے
شاہِ بطحاؐ! مجھے نظر دے دیں
زینتِ قرآں ہے یہ ارشادِ ربُّ العالمیں