اردوئے معلیٰ

 

صحرا میں اِک پُھول کھلا تھا ، دیکھا تھا؟

کونہ کونہ گھر مہکا تھا ، دیکھا تھا

 

دیکھا تھا پیڑوں کو رقص کے عالَم میں

پتّا پتّا جھوم اُٹھا تھا ، دیکھا تھا؟

 

قریہ قریہ بادل اُمنڈے آئے تھے

آنگن آنگن مینہ برسا تھا ، دیکھا تھا؟

 

ٹھنڈا کر ڈالا صدیوں کی آتش کو

بادل سے کوندا اُترا تھا ، دیکھا تھا؟

 

کس نے زخموں پرشبنم سے ہاتھ رکھے

کون ہمارے بیچ آیا تھا ، دیکھا تھا؟

 

کون تھا جو اپنے لوگوں کی حالت پر

راتوں کو اُٹھ کر روتا تھا ، دیکھا تھا؟

 

کس نے رستے کی ہر مشکل چُن لی تھی

کون اُس بستر پر سویا تھا ، دیکھا تھا؟

 

نیند فرشتے جب آنکھوں میں اُترے تھے

ایک زمانہ جاگ چکا تھا ، دیکھا تھا؟

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات