صدیوں میں کوئی ایک محبت ہوتی ہے

صدیوں میں کوئی ایک محبت ہوتی ہے

باقی تو سب کھیل تماشا ہوتا ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

اشک میں ڈھل کے آؤں گا
تنہائیِ شب میں ترے ہونے کی تمنّا
نہ ہو برہم جو بوسہ بے اجازت لے لیا میں نے
کچھ اس لیے بھی مسلسل سفر میں رہتا ہوں
توفیقِ دعا دے تو اثر ساتھ میں دینا
خاک بھی لطف زندگی نہ رہا
بات کرنے کا ترے رنگ برنگا لہجہ
کیوں نہ تنویر پھر اظہار کی جرآت کیجیے
اے دل کسے نصیب یہ توفیق اضطراب
اب یہ بھی نہیں ٹھیک کہ ہر درد مٹا دیں