عقل تو کب کی ہوئی گردشِ حالات میں گُم

عقل تو کب کی ہوئی گردشِ حالات میں گُم

حوصلہ دل کا بھی اب ٹوٹ رہا ہو جیسے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ