اردوئے معلیٰ

Search

عقیدتوں کا چلا قافلہ مدینے کو

کہ دل سے جاتا ہے اک راستہ مدینے کو

 

مجھے ملی ہے جو توفیقِ مدحتِ شہِ دیں

انہیں میں نعت سنانے چلا مدینے کو

 

کرم سے آپ کے خالی نہیں رہا کوئی

دعا یہی ہے کہ جائے گدا مدینے کو

 

ترے کرم سے مدینے چلے گئے سب لوگ

بلا لو مجھ کو بھی للہ شہا مدینے کو

 

لبوں پر ایک یہی مدعا ہے زاہدؔ کے

نبی کے صدقے ہو جانا مرا مدینے کو

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ