اردوئے معلیٰ

Search

فرش سے تا عرش سارے زمانے آپ کے

ساری دنیاؤں کے ہیں مخفی خزانے آپ کے

 

اک طرف صدیقِ اکبر اک طرف روح الامینؑ

ہم سفر کیا کیا بنائے ہیں خدا نے آپ کے

 

ذرہ ذرہ آپ کی سچی رسالت کا گواہ

ذرے ذرے کی زباں پر ہیں ترانے آپ کے

 

کروٹیں لیتے ہیں میرے ذہن میں بدر وحنین

یاد آتے ہیں بہت ساتھی پُرانے آپ کے

 

مرکزِ نور و نظر ہیں آپ کے غاور مزار

سب ٹھکانوں سے حسیں تر ہیں ٹھکانے آپ کے

 

حیرتیں گم ہوگئیں ہیں دانشیں ہیں لاجواب

رہ گئے اوصاف گِن گِن کر سیانے آپ کے

 

راستہ تکتی رہیں ان کی نگاہیں آپ کا

ہاتھ چومے ہیں رسولوں کی دُعا نے آپ کے

 

آپ کی یادوں میں گم رہتا ہے انجم رات دن

خواب آتے ہیں اسے اکثر سہانے آپ کے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ