اردوئے معلیٰ

فلک پر ربِّ کعبہ، شافعِ محشر سے ملتا ہے

زمیں پر خانہ کعبہ، روضۂ اطہر سے ملتا ہے

 

درِ کعبہ، درِ سرکار، دونوں قبلہ گاہیں ہیں

عطا کرتا ہے جو اللہ، نبی کے در سے ملتا ہے

 

شعور اللہ کی عظمت، جمالِ مصطفائی کا

درِ اقدس سے ملتا ہے، خُدا کے گھر سے ملتا ہے

 

خُدا کے نور کا محکم حوالہ نورِ یزداں کا

شہِ نور الہدیٰ سے، نور کے پیکر سے ملتا ہے

 

ہمیں ملتی ہیں ساری نعمتیں ہی دستِ قدرت سے

ہمیں سب کچھ ہی دستِ ساقیِ کوثر سے ملتا ہے

 

خُدا کی عظمتوں کا عکس، اُس کی شان کا پرتو

رُخِ زیبائے احمد، چہرۂ انور سے ملتا ہے

 

ظفرؔ محبوب کا صدقہ خُدا دیتا ہے جو جس کو

اُسے دستِ شہِ دیں سے، سخی سرور سے ملتا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات