اردوئے معلیٰ

لحد چاہوں مدینے میں خدا، تیری عبادت میں

امانت جان میں دے دوں مدینے کی زیارت میں

 

نہیں ہے خوف مرنے کا، تُو جانے کب سجے محشر

مدینہ گر نہیں ہو گا، رہوں گا کیسے راحت میں

 

جبیں بے چین ہے میری تڑپ دل میں تجھے دیکھوں

کروں سجدے بہ چشم نم، رہوں تیری عدالت میں

 

یہ دل کعبہ تو ہے مرا، نگاہوں میں مدینہ ہے

مری ہستی میں تُو مہکے، تیر چاہوں عنایت میں

 

مجھے توفیق دے ایسی، جبیں رکھ دوں جو کعبے میں

مجھے اُٹھنے نے دے سجدہ، کروں ایسی عبادت میں

 

مرے ماں باپ گل رشتے، شریک ہم سفر بیوی

بہن بھائی، مرے بچے، رہیں تیری حفاظت میں

 

سجے گا جب ترا محشر، میں آؤں گلؔ مدینے سے

ترے ہو روبرو سجدہ، محمد کی امامت میں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات