مثلِ سیاہ رات تھی دنیا کہ ایک دن

مثلِ سیاہ رات تھی دنیا کہ ایک دن

سرکارؐ چاند بن کے زمانے میں آگئے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

کہیں تاریخِ عالم میں نہ دیکھا
جبیں میری ہے اُنؐ کا نقشِ پا ہے
کوئی اُنؐ سا نہیں کون و مکاں میں
گُلوں میں رنگ، خوشبو تازگی ہے
’’کروں مدح اہلِ دُوَل رضاؔ ، پڑے اس بلا میں مری بلا‘‘
’’بختِ خفتہ نے مجھے روضہ پہ جانے نہ دیا‘‘
’’خدا کے فضل سے ہر خشک و تر پہ قدرت ہے‘‘
’’کس کو سنائیے گا یہاں غم کی داستاں ‘‘
سلسبیلِ نور میرے قلب تک پہنچی عزیزؔ
لحن سے نعت میں کچھ ایسا اثر آتا ہے