اردوئے معلیٰ

Search

محمد نام اس دل میں جڑا مثلِ نگینہ ہے

اسی کا ورد کرتی ہوں یہی میرا خزینہ ہے

 

سدا ملتی ہی رہتی ہے مجھے خیرات جلووں کی

انہی کے نوُر سے روشن نظر کا آبگینہ ہے

 

تصور میں ہمیشہ سامنے ہے والضحیٰ چہرہ

حقیقت میں بھی تو دیکھوں مری حسرت دیرینہ ہے

 

درودِ پاک کی محفل سجا کر نعت کہتی ہوں

خوشا قسمت یہی عادت یہی میرا قرینہ ہے

 

ازل سے زندگی میں آپ کی یادوں کی رونق ہے

بسیں دل میں مرے آقا مرا دل بھی مدینہ ہے

 

بلا لیں ناز کو در پر رہوں گنبد کی چھاؤں میں

مِرے شاہا جدائی میں ہوا دشوار جینا ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ