اردوئے معلیٰ

Search

مدحَتِ شاہِ مُرسلاں کا باغ

پھر کھلانے لگا ہے جاں کا باغ

 

پھر گواہی صدا میں گُونج اُٹھی

پِھر فضا میں کِھلا اَذاں کا باغ

 

پھر لبوں پر درود جاری ہوا

پھر مہکنے لگا بیاں کا باغ

 

نقشِ نعلیَنِ مصطفےٰ سے ہے

خاکِ طیبہ میں آسماں کا باغ

 

آلِ احمد پہ ہے بہارِ دوَام

سب سے خوش رُو ہے باغباں کا باغ

 

وہ ہیں شافع وہاں خدا سے ہمیں

لے کے دیں گے ہماری ماں کا باغ

 

یاد پھر آئی سبز گنبد کی

پھر نگہ میں ادَب سے جھانکا باغ

 

گلِ بخشش ہے بُوند بُوند اِس کی

ابرِ رحمت ہے دو جہاں کا باغ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ