اردوئے معلیٰ

Search

مدّاحِ مصطفیٰ ہوں ، مقدر کی بات ہے

میں نعت کہہ رہا ہوں ، مقدر کی بات ہے

 

اُس در پہ جا رہے ہیں میرے گھر سے بھی درود

میں کون ہوں ، میں کیا ہوں ، مقدر کی بات ہے

 

کیسے ملا خزانۂ عشقِ نبی مجھے

میں خود یہ سوچتا ہوں ، مقدر کی بات ہے

 

صلِّ علیٰ کے ورد سے رستے سمٹ گئے

منزل تک آ گیا ہوں ، مقدر کی بات ہے

 

مجھ کو نسب پہ ناز نہیں ، نسبتوں پہ ہے

اُس شاہ کا گدا ہوں ، مقدر کی بات ہے

 

میرا کوئی نہیں ہے ، کسی کا نہیں ہوں میں

میں صرف آپ کا ہوں ، مقدر کی بات ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ