اردوئے معلیٰ

Search

 

مرا نبی ہے جہاں کی رونق، جہاں کی رونق میرا نبی ہے

یہ سبز گنبد، یہ نور کعبہ، یہ سب اُسی کی تو روشنی ہے

 

جمالِ فطرت مرا نبی ہے، مرا نبی ہے کمالِ قدرت

جہاں کی رونق، دلوں کا محور، مرے نبی ہی کی زندگی ہے

 

مرے نبی کی حیات رحمت، اُسی کے دم سے ہے شان و شوکت

وہ شاہ ارض وسما تھے پھر بھی، جمیل اُن کی وہ سادگی ہے

 

جمالِ فطرت کے ہیں وہ مظہر، مرے نبی ہیں جہاں کی ارحم

زمیں پہ رحمت ہماری قسمت، خدا کی اُن سے وہ دلبری ہے

 

حیات افضل ہے اس جہاں کی اگر ہے دل میں نبی کی عظمت

شعور میں گر نبی نہیں ہے، یہ زندگی بس تو نام کی ہے

 

میں نعت کہنے کو کہہ رہا ہوں، مگر حقیقت میں یا محمد

حیات تیری میں گنگناؤں ترا ادب ہی تو شاعری ہے

 

چلو وہاں پر حیات دیکھیں، جہاں ہے میرے نبی کی بستی

سحر کی کرنوں سے نور برسے، مہکتی جنت سی شام بھی ہے

 

کلام ربی میں گفتگو ہے حیات مثل نظام قرآن

نبی کی سنت میں زندگی کی، ہر ایک لمحے میں دلکشی ہے

 

نفیس اُن کی حیات افضل، جمیل اُن کا کلام اقدس

وجودِ اطہر کا ہے نہ سایا، یہی تو فطرت کی شاعری ہے

 

نبی کے در پر دیارِ رب پر لکھوں قصیدہ جو مدحتوں کا

کہیں گے محشر میں جن وانساں، یہ گلؔ نبی کا ہی اُمتی ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ