اردوئے معلیٰ

مری جاں سے قریں میرا خُدا ہے

مرے دل میں جمالِ مصطفی ہے

 

خُدا کی حمد کا، نعتِ نبی کا

یہی بس ایک میرا مشغلہ ہے

 

مزیّن آپ کے نقشِ قدم سے

ہے یہ عرشِ بریں یا دل مرا ہے

 

میں اُن کے دلکشا فرمان لکھوں

خُدا جن کی زباں سے بولتا ہے

 

زیارت خواب میں جب آپ کی ہو

لرزتا ہے بدن، دل کانپتا ہے

 

نظر سوئے حرم، دل سوئے طیبہ

پیاپے کشمکش کا مرحلہ ہے

 

ظفرؔ! حُبِ خُدا، عشقِ نبی کا

بڑا مربوط باہم سلسلہ ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات