مری مراد مرا مدّعا محمد ہے

مری مراد مرا مدّعا محمد ہے

کرم کے آسروں کا سلسلہ محمد ہے

 

سکُوں کے واسطے آؤ گداگرو آؤ

ہمار آسرا اور حوصلہ محمد ہے

 

ہمارا حامی و ہمدرد ہے رسول اللہ

ہمارا ورد ہی صّلِ علٰی محمد ہے

 

اسی کے رحم و کرم سے اماں ہوئی حاصل

دکھی دلوں کے لئے آسرا محمد ہے

 

دھڑک دلوں کی ، دہاں کا ہے ورد اسم وہی

ہمارے واسطے ہر واسطہ محمد ہے

 

اسی کے در کا گدا ہوں اسی کا آسرا ہے

ہر اک لساں کی صدا اور دعا محمد ہے

 

ہوں لاکھ آہوں کے ہر سو ہی کارواں سائل

ہمارے روگ کی ہر اک دوا محمد ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ