اردوئے معلیٰ

Search

مصحفِ روئے منور کی تلاوت کر لوں

اپنی آنکھوں کی بصارت کو بصارت کر لوں

 

بہرِ توصیف و ثناء کر کے وضو اشکوں سے

خامۂ عجز کے ہمراہ ریاضت کر لوں

 

دست بستہ تری چوکھٹ پہ کھڑا ہوں نادم

سر اٹھانے کا ہو یارا تو زیارت کر لوں

 

اے مری موت ذرا ٹھیر مرے سرہانے

مژدۂ صبحِ ملاقات سماعت کر لوں

 

ضوفشاں دل کے حرا میں ہے تصور ان کا

اک ذرا رب سے طلب حسنِ نظارت کر لوں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ