مفلوج کئے پہلے مرے ہاتھ مکمل

 

مفلوج کئے پہلے مرے ہاتھ مکمل

پھر چھین لیا مجھ سے مرا ساتھ مکمل

 

اُس پر کسی پنچھی کا ٹھکانہ نہیں ہوتا

جس پیڑ کے جھڑ جاتے ہیں پھل پات مکمل

 

جب جیت گیا اُس سے تو پھر جا کے کھُلا یہ

میں جیت جسے سمجھا وہ تھی مات مکمل

 

دو گام کی سنگت ہمیں منظور نہیں ہے

دینا ہے اگر تم کو تو دو ساتھ مکمل

 

خواہش کسے ہوتی نہیں اُس باغِ ارم کی

قسمت ہی سے ہوتی ہیں مُناجات مکمل

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ