اردوئے معلیٰ

Search

ملے عظمت اسی کو بس جہاں میں

کرے جو تذکرہ ان کا زماں میں

 

چلے جب مدحتوں کے گلستاں میں

لگا خود کو ہیں ہم باغِ جناں میں

 

نبی کے در پہ اپنا سر جھکا لو

لگے گا مرتبہ ہے آسماں میں

 

کہے اشعار جب میں نے ثنا کے

حلاوت گھل گئی میری زباں میں

 

مرے کب کام آئیں میری غزلیں؟

کہ نعتوں نے ہے پہنچایا جناں میں

 

فقط نعتِ نبی کے صدقے زاہدؔ

تجھے شہرت ملی ہے دو جہاں میں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ