اردوئے معلیٰ

مولود مصطفیٰ کی گھڑی یہ سماں ہوا

ہر گوشۂ زمین و فلک ضوفشاں ہوا

 

مشکل نہ کوئی سامنے آ کر کھڑی ہوئی

ذکرِ نبی لبوں پہ ہے جب سے رواں ہوا

 

مؤمن کے واسطے ہوا لازم نبی کا عشق

یعنی نبی کا عشق ہی ایماں کی جاں ہوا

 

اعجاز ہے یہ احمدِ مرسل کی نعت کا

عشقِ مجاز قلب سے نکلا ، دھواں ہوا

 

تابانیاں حضور نے ذروں کو بخش دیں

دشتِ عرب انہی کے سبب کہکشاں ہوا

 

آیت کلامِ رب کی ہے شاہد طہور پر

یوں پاک ہر برائی سے وہ خانداں ہوا

 

جس دم رہی زبان پہ نعت نبی قمرؔ

لمحہ وہ زندگی کا کہاں رایگاں ہوا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات