اردوئے معلیٰ

Search

میری بس ایک آرزو چمکے

تیرا محبوب رو برو چمکے

 

حمد تیری میں جب گلو چمکے

تیری رحمت بھی چار سُو چمکے

 

کوئی مشکل نہیں تجھے پانا

آرزو میں جو جستجو چمکے

 

جب تصور میں تو مہکتا ہے

ذہن میں جیسے گل شبو چمکے

 

جو تصور میں ہے نبی میرے

جب بھی چمکے وہ ہو بہو چمکے

 

ہو کرم تیرا تیری مدحت ہو

جان میری مرا لہو چمکے

 

دل میں ایمان کی حرارت ہو

کیوں نہ پھر میری آبرو چمکے

 

تیری خوشبو ملے جو کعبے میں

حشر میں گلؔ بھی سُرخرو چمکے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ