میرے گھر میں بھی کہکشاں کی طرح

میرے گھر میں بھی کہکشاں کی طرح

ربط قائم ہے انتشار کے ساتھ

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

دل نے مانی نہیں مری ورنہ
دل لگی ترک محبت نہیں تقصیر معاف
مجھ میں یوں تازہ ملاقات کے موسم جاگے
ہم محبت کشید لوگوں پر
پرندہ اب کوئی کومل نہیں مایوس لوٹے گا
ہمارے بخت میں یہ سانحہ لکھا گیا ہوگا
یہ شبنمی لہجہ ہے آہستہ غزل پڑھنا
ہوا کے سرد ہونے سے مجھے تسکین ملتی ہے
بہت دن سے وہ نا مانوس لہجہ
چاشنی چاشنی لہجہ جس کا

اشتہارات