اردوئے معلیٰ

میں آفتاب کہوں یا اسے ستارہ لکھوں

اسے لکھوں میں سمندر اسے کنارہ لکھوں

 

زمانے بھر کی کڑی دھوپ کی تمازت میں

میں دوجہاں کا اسے آخری سہارا لکھوں

 

ہے اس کے سوچ چراغوں کی روشنی میں لکھی

عبارتوں کے ہر اک لفظ کو ستارہ لکھوں

 

دلوں میں اسم محمد کی جگمگاہٹ کو

جہاں میں بہتا ہوا روشنی کا دھارا لکھوں

 

میں کائنات کے ہر حسن کو حسن رضوی

جمال احمد احمد مرسل کا استعارہ لکھوں

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات