اردوئے معلیٰ

میں بے بس و لاچار ہوں، بیمار بہت ہوں

سرکار کی رحمت کا طلب گار بہت ہوں

 

دامانِ کرم آپ کا درکار ہے آقا

میں بندۂ عاصی ہوں، گنہ گار بہت ہوں

 

دیوانہ و مستانہ و پروانۂ جاں سوز

مشتاق ہوں میں طالبِ دیدار بہت ہوں

 

سرکار کی چوکھٹ پہ جبیں جب سے رکھی ہے

سرمست ہوں، مسرور ہوں، سرشار بہت ہوں

 

میں اُن کا قلم کار ہوں اُن کا ہی صدا کار

یہ اُن کی عطا ہے کہ طرح دار بہت ہوں

 

ہر لحظہ میں دلگیر ہوں، رنجور ہوں، مغموم

حسنینِ کریمین کا غم خوار بہت ہوں

 

سرکار کی رحمت نے ظفرؔ مجھ کو نوازا

ہوں اُن کا سگِ در میں، وفادار بہت ہوں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات