اردو معلی copy
(ہمارا نصب العین ، ادب اثاثہ کا تحفظ)

میں تجھ کو دیکھ لوں اتنی تو زندگی دے دے

میں تجھ کو دیکھ لوں اتنی تو زندگی دے دے

مرے خدا مری ہستی کو روشنی دے دے

 

ترے کرم سے میں کعبہ تو دیکھ آیا ہوں

مجھے کلام محمدؐ کی دلکشی دے دے

 

تو اپنے پیارے محمدؐ کے نام پر مولا

مرے ضمیر کو ملت سے دوستی دے دے

 

ترے کرم کی نہیں مجھ پہ انتہا کوئی

مجھے قضائے شہادت کی شاعری دے دے

 

یہ گلؔ غریب ہے عاصی مگر غنی دل کا

اسے علیؓ کے گھرانے کی چاکری دے دے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

میں تیرا فقیر ملنگ خدا
تو اعلیٰ ہے ارفع ہے کیا خوب ہے​
اے میرے مولا، اے میرے آقا، بس اپنے رستے پہ ڈا ل دے توُ
دردِ دل کر مجھے عطا یا رب
شعور و آگہی، فکر و نظر دے
خدا اعلیٰ و ارفع، برگزیدہ
خدا مجھ کو شعورِ زندگی دے
میں بے نام و نشاں سا اور تو عظمت نشاں مولا
خدا ہی بے گماں خالق ہے سب کا
خدا آفاق کی روحِ رواں ہے