اردوئے معلیٰ

Search

میں ترے بس کی بات ہی نہیں ہوں

عشق ہوں کوئی زندگی نہیں ہوں

 

لطف لیتا ہوں اپنی حالت سے

بے رخی ہوں، میں بے بسی نہیں ہوں

 

تو حسیں اس جہاں میں پہلا نہیں

اور میں عشق آخری نہیں ہوں

 

مجھ کو دریا بہا کے لے جائے

کوئی مٹی کی جھونپڑی نہیں ہوں

 

میں خدا کا حمایتی ہوں یہاں

نفرتوں کا حمایتی نہیں ہوں

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ