اردوئے معلیٰ

Search

 

میں خاک ہوں مولا، تو مرا پھول بدن کر

قندیلِ محمد ، سے تو روشن مرا من کر

 

تُو ہر جگہ موجود ہے، لیکن مرے مولا!

کعبہ و مدینہ کو تو میرا ہی وطن کر

 

شاداب کروں دل کو نگاہوں سے کرم ہو

دیکھوں ترے کعبے کو میں تصویر سا بن کر

 

میں حمد پڑھوں اور کہوں نعت محمد

تُو اپنی تجلی سے منور مرا من کر

 

گلزارِ مدینہ کی ہوا سے، مرے مولا!

خوش بو میں معطر دلِ صحرا کو چمن کر

 

مہکا مرے لفظوں کو پڑھوں، حمد و ثنا، تُو

بس گل ہی سا مولا مرا یہ خاک بدن کر

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ