اردوئے معلیٰ

میں عِشق زار میں اِس دِل سمیت مارا گیا

میں عِشق زار میں اِس دِل سمیت مارا گیا

قتِیل دشت میں قاتِل سمیت مارا گیا

 

تمہارے حُسن کی تشہیر کر رہا تھا رقیب

سو میرے ہاتھ سے محفِل سمیت مارا گیا

 

چلا تھا عِشق کا جو جِن اتارنے ہمزاد

عمل سے پیشتر عامِل سمیت مارا گیا

 

بڑا فساد ہوا عِشق کی ضمانت پر

وکیل اپنے موکِل سمیت مارا گیا

 

مجھے تو فکر ہے یاروں کی خوب روئیں گے

اگر میں سارے مسائِل سمیت مارا گیا

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ