اردو معلی copy
(ہمارا نصب العین ، ادب اثاثہ کا تحفظ)

میں لاکھ برا ٹھہرا، یہ میری حقیقت ہے

 

میں لاکھ برا ٹھہرا، یہ میری حقیقت ہے

بس ایک ہی خوبی ہے سرکارؐ سے نسبت ہے

 

ہر کاسہء جاں بھر دے، اوقات سے بڑھ کر دے

خالی نہ کوئی جائے سرکارؐ کی عادت ہے

 

یہ دُھوپ ستاتی ہے تن من کو جلاتی ہے

اب گنبدِ خضریٰ کے، سائے کی ضرورت ہے

 

جب تمؐ سے ہوئی نسبت، مٹی سے بنے سونا

اس خاک کی عظمت بھی آقاؐ کی بدولت ہے

 

دکھ درد کے مارے کو اشفاقؔ یہ بتلا دو

یہ نام وظیفہ کر اس نام میں راحت ہے

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

آخری عکس
رکھا بے عیب اللہ نے محمد(صلی اللہ علیہ وسلم) کا نسب نامہ​
حقیقت میں تو اس دنیا کی جو یہ شان و شوکت ہے
نبی کی نعت پڑھتا ہوں کہ ہے یہ دل کشی میری
ذاتِ والا پہ بار بار درود
نہ ہو آرام جس بیمار کو سارے زمانے سے
قلب میں ذِکرِ خیر الوریٰؐ چاہیے
کرم یا ربّ! بہت رنجور ہوں میں
شاہِ بطحاؐ! مجھے نظر دے دیں
پیار اُنؐ کا میری جاگیر