اردوئے معلیٰ

میں نے جب نعت کے اشعار سے باتیں کی ہیں

یوں لگا احمدِ مختار سے باتیں کی ہیں

 

اے مرے پیارے تخیل ترے صدقے جاؤں

تو نے اکثر مرے سرکار سے باتیں کی ہیں

 

اس کی تعریف میں الفاط بھی کم پڑ جائیں

جس کے اک سجدے نے تلوار سے باتیں کی ہیں

 

عشقِ سرکار میں یہ حال ہوا ہے اکثر

میں نے گھر کے در و دیوار سے باتیں کی ہیں

 

کیوں نہ وہ رحمتِ عالم ہوں زمانے کہ لیے

جس نے کردار میں سنسار سے باتیں کی ہیں​

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات