نبیؐ اللہ کا مُجھ پر کرم ہے

نبیؐ اللہ کا مُجھ پر کرم ہے

نبیؐ دمساز میرا، دم بدم ہے

 

مرے سرکارؐ مُجھ پر مہرباں ہیں

مجھے تشویش ہے کوئی نہ غم ہے

 

امام الانبیا، محبوبِ یزداںؐ

عجب رُتبہ، عجب جاہ و حشم ہے

 

نہیں آنسو وہ برساتی ہے موتی

نبیؐ کی یاد میں جو آنکھ نم ہے

 

خُدا کا نام، اسمِ مصطفیؐ بھی

مرے سینے، مرے دِل میں رقم ہے

 

سگِ در ہوں درِ خیر البشرؐ کا

مرا سرکارؐ نے رکھا بھرم ہے

 

مری سرکارؐ کی وہ نعت لکھے

ظفرؔ! جو دیدہ ور، صاحب قلم ہے

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

حاصل ہوا جو فیض رسول انام کا
کمتر تھا جذب و شوق، کرم بیشتر رہا
جو روشن حلیمہ کا گھر دیکھتے ہیں
نعت پیکر باندھتی ہے اذن کی تاثیر سے
دہر پر نور ہے ، ظلمات نے منہ موڑ لیا
نعتِ پیغمبرؐ لکھوں طاقت کہاں رکھتا ہوں میں
نہ رنج یاد رہے ، سب ملال بھول گئے
سرتاجِ انبیاء ہو شفاعت مدار ہو
خواہشِ دید! کبھی حیطۂ ادراک میں آ
کس درجہ تلفظ آساں ہے معناً بھی نہایت اسعد ہے

اشتہارات