اردوئے معلیٰ

نبی کی نعت لکھیں تھا نہ حوصلہ ہم کو

نبی کی نعت لکھیں تھا نہ حوصلہ ہم کو

پہ فرطِ شوق نے مجبور کر دیا ہم کو

 

صفِ رسل میں دکھائی دیا بڑا ہم کو

بذاتِ مصطفوی ناز ہے بجا ہم کو

 

نصیب دامنِ رحمت ہو آپ کا ہم کو

اب اور چاہئے سچ پوچھئے تو کیا ہم کو

 

نبی ملا تو خدا کا پتہ چلا ہم کو

جب اس کی راہ چلے ہم خدا ملا ہم کو

 

کسی کو موسیٰؑ و عیسیٰؑ کسی کو نوح ملے

خوشا نصیب ملا شاہِ دو سرا ہم کو

 

رہِ حیات میں چلنا ہوا ہمیں آساں

گیا وہ دے کے چراغِ نقوشِ پا ہم کو

 

وہ فرد فرد کا غم اپنے دل میں رکھتا تھا

کوئی نہ اس سا ملا درد آشنا ہم کو

 

کتابِ حق وہ ملی ہے بدستِ پاکِ نبی

کہ حرف حرف بنا جس کا رہنما ہم کو

 

عمل پہ ناز کسے ہو سکے پئے بخشش

شفیعِ روزِ جزا کا ہے آسرا ہم کو

 

بتا گیا ہمیں اعمالِ منکر و معروف

سجھا گیا وہ نظرؔ سب برا بھلا ہم کو

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ