نبی اکرمؐ شفیع اعظمؐ دکھے دلوں کا پیام لے لو

نبی اکرمؐ شفیع اعظمؐ دکھے دلوں کا پیام لے لو

تمام دنیا کے ہم ستائے کھڑے ہوئے ہیں سلام لے لو

 

شکستہ کشتی ہے تیز دھارا نظر سے روپوش ہے کنارا

نہیں کوئی ناخدا ہمارا خبر تو عالی مقام لے لو

 

قدم قدم پہ ہے خوف رہزن زمیں بھی دشمن فلک بھی دشمن

زمانہ ہم سے ہوا ہے بدظن تمہیں محبت سے کام لے لو

 

کبھی تقاضا وفا کا ہم سے کبھی مذاقِ جفا ہے ہم سے

تمام دنیا خفا ہے ہم سے خبر تو عالی مقام لے لو

 

یہ کیسی منزل پہ آ گئے ہیں نہ کوئی اپنا نہ ہم کسی کے

تم اپنے دامن میں آج آقاؐ تمام اپنے غلام لے لو

 

یہ دل میں ارماں ہے اپنے طیب مزار اقدس پہ جا کے اک دن

سناؤں ان کو میں حال دل کا کہوں میں ان سے سلام لے لو

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے

متعلقہ اشاعتیں

رنگ بکھرے ہیں مدینہ میں وہ سرکار کہ بس !
واہ کیا مرتبہ ہوا تیرا
کون کہتا ہے کہ زینت خلد کی اچھی نہیں
نبی کے برابر ہوا ہے نہ ہو گا
آپؐ کے آستاں پہ جاتے ہیں
آپؐ کے آستاں پہ آتا ہوں
وہی محبوب، محبوبِ خُداؐ ہے
خدا کا، عشق محبوبِ خدا کا
واصف نبی کا اپنے یہاں جو بشر نہیں
کمال اسم ترا، بے مثال اسم ترا