اردوئے معلیٰ

نبی ملے تو خدا سے ملا درود شریف

مری حیات کا جز بن گیا درود شریف

 

سماعتوں میں جہاں نام مصطفیٰ آیا

ادب سے جھک کے پڑھا بارہا درود شریف

 

چلی جو شہر مدینہ کی نرم نرم ہوا

گلوں کی طرح مہکنے لگا درود شریف

 

خیال گنبد خضریٰ کا آ گیا جس دم

لبوں پہ آگیا بے ساختہ درود شریف

 

پڑھا درود، نظر آیا گنبد خضریٰ

بنا ہوا ہے مدینہ نما درود شریف

 

بوقت نزع پڑھوں لا الٰہ الا اللہ

زبان پر رہے صبح و مسا درود شریف

 

میں پل صراط سے گزروں گا جس گھڑی انجمؔ

گزرتا جاؤں گا پڑھتا ہوا درود شریف

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ

اردوئے معلیٰ

پر

خوش آمدید!

گوشے۔۔۔

حالیہ اشاعتیں

اشتہارات

اشتہارات