’’نصیب تیرا چمک اُٹھا دیکھ تو نوریؔ ‘‘

 

’’نصیب تیرا چمک اُٹھا دیکھ تو نوریؔ ‘‘

مِلی ہے تُربتِ خاکی میں جا کے مسروٗری

وہ اپنا جلوۂ آرا دکھانے آئے ہیں

’’عرب کے چاند لحد کے سرہانے آئے ہیں ‘‘

 

یہ نگارش اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے

اشتہارات

لُطفِ سُخن کچھ اس سے زیادہ